4

خوگرِ حمد سے تھوڑا سا گلہ بھی سُن لے-عدیل آزاد

شکوہ تو بہت سوں سے ہےمگرسب سے زیادہ گلہ اپنی برادری سے ہے۔ روزِ محشر جب خَلّاقِ عالم پوچھے گا: اے انبیاء کے وارثو !

تم اپنی ذاتوں اور منصبوں پر توانگلی نہیں اُٹھنے دیتے تھے مگر میرے دین کا مذاق اُڑانے اور بے حیائی کے چسکوں میں تمہارے وطن سر فہرست تھے، تُم نے کیا، کیا ؟ تُم نے خدا کے نام کی چار اینٹیں لگا کر اپنے محلات تعمیر کرلیے مگر خدا کے نام پر ایک مکتب، ایک مسجد، ایک امام، ایک پرچم تلے جمع نہیں ہوئے؟ مانا دین کے فہم میں تم نے الگ الگ معیار قائم کر لیے تھے لیکن ستر سالوں میں تمہاری تیسری نسل تو کروڑ پتی ہوگئی لیکن اللہ کا دین آج تک غریب کیوں ہے؟

تُم نفرتوں کےبیج بوتے رہے، تُم فاصلوں کے خندق کھودتے رہے، تُم جُبّوں،قُبّوں اور اناؤں سے آگے نہیں بڑھ سکے۔ تُم نے دین کو دیوار اور آڑ بنایا۔ تُم نےاسلام کا تقدس بیچا۔ تُم نے حُرمتِ رسول کے نام پر قوم کو لوٹا۔ رمضان ربیع الاول اور محرم تمہارے سیزن کے مہینے کہلائے۔ شاہوں کا قرب اور مریدوں کےنذرانے کامیابی کے زینے بنے۔ تُم داڑھی اور خطبے کی سنت پر لمبے لمبے لیکچر دیتے رہے مگر تم میں سے اکثریت کے پیٹ سُنت کو رنجیدہ کرتے رہے۔

سود حرام تھا مگر اوروں کےلیے۔ اخلاق ضروری تھا مگر دوسروں کے لیے۔ سچ لازم تھا مگربچوں کےلیے۔ تکبر گناہ تھا مگر مقتدیوں کےلیے۔

سیکولرازم پنپتا رہا۔ لادینیت بچے جنتی رہی۔ اغیار کے نظام چلتے رہے۔ تُم سوئے رہے۔ تُم فتوی فتوی کھیلتے رہےاور بے دینی تُم سے تمہاری نسلیں، تمہاری شکلیں، تمہاری حیثیتیں چھین لے گئی۔ تُم اُچھل اُچھل کر کافر کافرکہتے رہے اور ابلیسی طاقتیں وطن کی شریانوں سے خون چوستی رہیں۔ تاویلوں اورخواہشوں نےشریعت کا روپ دھارا اورعلمائے سو پوپ، پال، پادری بنے۔ قرآن گوگل سے ڈاؤنلوڈ کرکے پڑھا جاتا رہا اورپیش امام کےنام پرچھ چھ سمیں رجسٹرڈ ہوتی رہیں۔

لبرلز کو الگ رکھیےحضور وہ تو ٹھہرے زندیق، یہاں لوگ بغیر کلمے کے مر رہے ہیں۔ مسجدوں، مزاروں اور خانقاہوں سے لاشیں اُٹھائی جا رہی ہیں۔ اُن واعظوں کوخبر ہو جو ایک بیان کا پچاس پچاس ہزار لیتے ہیں کہ موجودہ نسل کو سید الاستغفار نہیں آتا۔ استخارے کی دعا نہیں آتی۔ تیسرا کلمہ نہیں آتا۔ غسل کا طریقہ نہیں آتا۔ جنازہ نہیں آتا۔

اس کے ہاتھ میں آکسفورڈ، کیمبرج اور سٹینفورڈ کی ڈگری ہے۔ وہ انگلش روانی سے بولتا ہے اور پھٹی ہوئی پتلون پہنتاہے۔ تین تین گرل فرینڈز ہیں اور کھیل کود میں شراب بھی پی لیتا ہے۔ تُم نے کیا، کیا ؟ ذرا پتا کیجئے پورن ویڈیوز دیکھنے میں سر فہرست کون سا ملک ہے ؟

تمہارے خطبات کے عنوان کیا ہوتے تھے؟
تمہارا اندازِ تخاطب کیسا ہونا چاہیے تھا ؟
کیا تُم نے زمانے کی رفتار سے چلنا سیکھا تھا ؟
کیا تمہیں معلوم ہے 1439ھ میں امت کو کونسے چیلینجز کا سامنا ہے؟

عدیل آزاد
14/2/2018

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں